25 May, 2022 | 23 Shawwal, 1443 AH

Money

November 26, 2021

علیکم ورحمۃاللہ وبرکاتہ! میرا سوال یہ ہے کہ میرے ابو ایک اسلامی ریاست مسقط میں رہتے ہیں اور وہاں ہر سال کے آخر میں بینک کی طرف سے انعام نکلتا ہے اور کڑوڑں کے حساب سے انعام نکلتا ہے کیا وہ لینا جائز ہے۔ قرعہ ادازی کر کے دیا جاتا ہے اور بینک سٹمینٹ زیادہ ہونے پر نکلتا ہے اس کا طریقہ کار کیا ہوتا ہے؟ اسکا طریقہ کار یہی ہوتا ہے کہ سال کے آخر میں ایک چھوٹا اور ایک بڑا انعام رکھا جاتا ہے چھوٹا ایک لاکھ دس ہزار ریال اور بڑا دس لاکھ ریال ہے۔ اب کائمپیوٹر میں قرا اندانزی کی جاتی ہے اور 3 بندوں میں چھوٹا تقسیم کیا جاتا ہے پہلے بندے کو 60 فیصد دوسرے کو 30 اور تیسری کو 10 فیصد دیا جاتا ہے۔ اسی طرح بڑا انعام بھی ایسے ہی تقسیم ہوتا ہے۔ لیکن کسی کو بھی نہیں پتہ ہوتا کہ انعام ہمارا نکلے گا۔ اور بینک والے ہر سال اس لیے انعام دیتی ہیں تا کہ ہمارا بینک لوگ زیادہ استعال کریں اور شاید یہ اُنکی اپنی کوئی پالیسی ہے۔ اور یہ کرنٹ اکاؤنٹ والوں کا دیا جاتا ہے ۔ اسکو کیا نام دیا جاتا ہے؟ اسکو المزيونة اومان پرائز اسکیم نام دیا جاتا ہے۔?

تفصیل/مزیدمعلومات