18 Dec, 2018 | 9 Rabiul Akhir, 1440 AH

Question #: 2284

September 08, 2018

kya agar koi shaks ye kahe k ALLAH TAALA KO AISA NAHIN KARNA CHAHIYE TO WOH KAFIR HO GAYA,SRIF ZUBAN SE KAHE YA PHIR DIL mein agar tasleem kare to bhi doosra sawal:agar koi non muslim larki kisi musalmaan mard ko kahe k agar tum mugh se shaadi karo to mein musalmaan ho jaon aur mard kahe k mein nh kr sakta to kya mard kaafir ho jae ga Teesra sawal :agar biwi se humbistri k waqt bacche ko hath lag jae to nikah khatm ho jata he

Answer #: 2284

الجواب حامدا و مصلیا

  1. ’’اللہ تعالیٰ کو ایسا نہیں کرنا چاہیے ‘‘  یہ کلمہ کفریہ ہے، اس سے انسان کافر ہوجاتا ہے، کہنے والا خواہ  صرف زبان سے کہے یا دل میں اس کو تسلیم کرے۔  لہذاصورت مسؤلہ میں  جس نے یہ کلمہ کہا ہے ، اس پر لازم ہے کہ وہ دوبارہ کلمہ پڑھے اور مسلمان ہوجائے اور  اگر شادی شدہ ہو تو تجدید نکاح بھی کرے۔           (کذا فی    ’’ کفریہ الفاظ اور ان کے احکام‘‘ : ۴۱)

  2. یہ جملہ کفر نہیں  ہے۔

  3. اس سے نکاح ختم نہیں ہوتا۔

والله اعلم بالصواب

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

دارالافتاء ، معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

‏08‏ محرّم‏، 1440ھ

‏19‏ ستمبر‏، 2018ء