13 Aug, 2020 | 23 Dhul Hijjah, 1441 AH

Question #: 2602

May 05, 2020

Asa. Kia aurtain ak jgah ikathi ho ker eid namaz prh skti hyn is haal men k imamat krwanay wali aurat baaqi safo sy aagy kharri ho jesy k imam khara hota hay. Kia is halat men aurto ki eid nmaz jaiz hay .. Aurto ki nmaz e eid ki adaaigi ka kia hukam hay .

Answer #: 2602

السلام علیکم! کیا عورتیں ایک جگہ اکٹھی ہو کر عید نماز پڑھ سکتی ہیں اِس حال میں کہ امامت کروانے والی عورت باقی سفوں سے آگے کھڑی ہو جیسے کہ امام کھڑا ہوتا ہے۔ کیا اِس حالت میں عورتوں کی عید نماز جائز ہے؟ عورتوں کی نماز ِعید کی ادائیگی کا کیا حکم ہے؟

الجواب حامدا ومصلیا

عید کی نماز مَردوں پر واجب ہے، عورتوں پر نہیں ہے۔۔ عورت کا عورتوں کی امامت کرانا بھی مکروہ تحریمی ہے۔ لہذاصورت مسؤلہ میں  عورتوں کا اکیلےعیدکی نماز کا  اہتمام  کرنا جائز نہیں ہے، اس کو چھوڑدینا ضروری ہے۔

الدر المختار (2/ 166)

 ( تجب صلاتهما ) في الأصح ( على من تجب عليه الجمعة بشرائطها ) المتقدمة.

البحر الرائق (2/ 170)

( تجب صلاة العيد على من تجب عليه الجمعة بشرائطها سوى الخطبة ) تصريح بوجوبها وهو إحدى الروايتين عن أبي حنيفة وهو الأصح.

والله اعلم بالصواب

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غَفَرَاللّٰہُ لَہٗ

دارالافتاء ، معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

‏30‏ شوّال‏، 1441ھ

‏22‏ جون‏، 2020ء