15 Nov, 2018 | 6 Rabiul Awal, 1440 AH

Question #: 2294

October 01, 2018

mere ooper kuch mushkil haalat aae to mera dil mujhe aksar kehta tha k ALLAH TAALA ko mera sath is tareh nh karna chahiye tha laken mein aksar apne dil ko kehta tha k ALLAH TAALA mere sath kaise galat kr sakte hn ab kya mujhe apne nikah k tajdeed krne chahiye

Answer #: 2294

الجواب حامدا و مصلیا

دل ميں غلط خيالات آنے سے  كچھ فرق نہیں پڑتا   جب تک اپنی زبان اورعمل سے کچھ نہیں کرتا اور نہ ہی غلط خیالات سے  ایمان ختم ہوتا ہے اور نہ ہی اس کی وجہ سے نکاح ٹوٹتا ہے ۔ اوروسوسہ کی وجہ سے پریشان آدمی کو مطمئن ہوناچاہیے کہ یہ وساوس اور خیالات ان کےایمان کی علامت ہیں۔

لہذا آپ اپنے کام کاج میں مصروف رہا کریں، ان وسوسوں کی طرف توجہ نہ کیا کریں ،اور دل میں یہ بات بیٹھا لیں کہ  ان خیالات سے کچھ بھی نہیں  ہوتا، بلکہ اس کی وجہ سے آپ کو جو تکلیف ہوتی ہے، اس پر آپ کو ثواب ملےگا۔

الفتح الرباني/ الساعاتي ( أجزاء منه ) - (1 / 17)

(وأما قوله) فليستعذ بالله ولينته فمعناه إذا عرض له هذا الوسواس فليلجأ إلى الله تعالى في دفع شره وليعرض عن الفكرة في ذلك وليعلم أن هذا الخاطر من وسوسة الشيطان وهو إنما يسعى بالفساد والإغواء فليعرض عن الإصغاء إلى وسوسته وليبادر إلى قطعها بالاشتغال بغيرها.

والله اعلم بالصواب

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

دارالافتاء ، معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

‏07‏ صفر‏، 1440ھ

‏18‏ اکتوبر‏، 2018ء